ہم جنس پرستی کرنے والوں کو کورونا کا 80 فیصد زیادہ خطرہ ہوتا ہے

668

عالمگیر وبا کورونا وائرس نے دنیا کے 190سے زائد ممالک کواپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے جب کہ وائرس سے سب سے خطرہ عمر رسیدہ افراد کو ہے۔

کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے ماہرین صحت کی جانب سے لوگوں کو سماجی دوری اختیار کرنے، مصافحہ نہ کرنے جب کہ وٹامن سی اور ڈی سے بھرپور غذا استعمال کرنے کو بھی کیا جا رہا ہے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترکی گرین کریسنٹ کے صدر پروفیسر موساہت اوزترک کا کہنا ہے کہ وائرس سے بچنے کے لیے لوگوں کو ہم جنس پرستی کی عادت کو ترک کرنا ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ ہم جنس پرستی کرنے سے کورونا وائرس کے خطرات میں اضافہ ہوجاتا ہے جب کہ بچہ بازی سے جُڑی تمام عادات کو تَرک کرنے سے وائرس کے خطرات کو کم کیا جا سکتا ہے۔
پروفیسر موساہت اوزترک نے بتایا کہہم جنس پرستی کرنے سے ہمارا نظامِ قوتِ مدافعت کمزور ہوجاتا ہے جس کی وجہ سے وائرس کے خطرات میں اضافہ ہوجاتا ہے۔
چین میں کیے جانے والے ایک سروے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہہم جنس پرستی کرنےوالے لوگوں کو کورونا وائرس کا خطرہ عام لوگوں سے 80 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔
خیال رہے کہ اس سے قبل عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی جانب سے بھی لوگوں کو خبردار کیا گیا تھا کہ ہم جنس پرستی سے وائرس کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

Comments