کیا آپ کو کھانسی ہے؟ – اگر آپ کو کھانسی ہےتو اسکو کھانسی ہی سمجھئے

490

 آج کل جس کو کھانسی ہوتی ہے۔ بخار ہوتا ہے۔ خود پر شک ہونے لگتا ہے۔ کہ کہیں۔۔۔

خیر، دس دن پہلے میری بھائی کو کھانسی شروع ہوئی اور اس کو لگا کہیں یہ وائرس نہ ہو۔ احتیاطی تدابیر کے تحت اس نے خود کو کوارنٹین کر لیا۔ ہمیں کہا گیا کہ کھانا دروازے میں رکھا جائے۔ اور بات فون پر کی جائے۔ کیونکہ کچھ پتہ نہیں کہ کچھ دنوں بعد کھانسی کیا شکل اختیار کرتی ہے۔ بھائی کے مطابق بہت سے لوگوں میں علامات نہیں بھی ہوتیں اور ٹیسٹ پازیٹیو آجاتا ہے۔ پہلے تو ہمیں پریشانی نہیں تھی۔ لیکن جب کمرے کے اندر سے یہ بندہ ہیلپر کو کال کرکے ٹیبلٹس پر ٹیبلٹس منگوانے لگا تو ہم ذرا چونک گئے کہ معاملہ کیا ہے

بالآخر نویں دن ہم نے پوچھ لیا کہ معاملہ کیا ہے۔ اچھا ہے کہ ٹیسٹ دینے جاؤ۔ اس نے حامی بھرتے ہوئے کہا کہ ٹھیک ہے لیکن ذہنی طور پر تیار رہو کہ رزلٹ پازیٹیو آنے کی صورت میں تم لوگ 14دن گھر سے نہیں نکل سکو گے ہم نے ذہنی طور پر تمام نتائج کے لیے ذہن تیار کر لیا۔ اور کہا کہ جو ہوگا دیکھا جائے گا۔ بھائی کو خود ٹیسٹ کے لیے جانا تھا کیونکہ ہم سب اس سے دور بھاگ رہے تھے ٹیسٹ کروا کر گھر آیا تو گاڑی کے اندر باہر بہت سارا سپرے کیا۔ روزانہ اس کے برتن اٹھانے کے لیے دستانے پہنے جاتے تھے۔ اور برتنوں کو شدید گرم پانی سے دھویا جاتا تھا۔ ٹیسٹ رزلٹ کے لیے سب بے چینی سے انتظار کرنے لگے۔ جو کہ پرسوں شام نیگیٹیو آیا۔

آپ اندازہ کر سکتے ہیں کہ ہمیں کس قدر ریلیف ملا ہوگا۔ اب اصل پوائنٹ کی طرف آتے ہیں ۔ صرف کھانسی کو لے کر ہم اتنے پریشان ہوئے جن گھروں میں پازیٹیو کیس نکلتے ہیں ان فیملیز کا کیا حال ہوگا! اور ہر وہ شخص جو کھانسی، زکام یا بخار میں یا تو خود اور یا ان کے پیارے آج کل مبتلا ہوتے ہیں وہ سب کس قدر پریشانی سے گزرتے ہوں گے! یقیناً ہم بہت عجیب حالات سے گزر رہے ہیں۔

اہم بات یہ ہے، کہ ضروری نہیں اگر آپ کو کھانسی بخار یا جسم میں درد ہو تو یہ کرونا وائرس ہوگا۔ یہ موسمیاتی تبدیلی کا اثر بھی ہو سکتا ہے۔ الرجی بھی ہو سکتی ہے۔ کوئی دوسری بیماری بھی ہو سکتی ہے۔ اور اگر کرونا وائرس ہو بھی تو کیا ہوا، بہت سارے لوگ اس سے صحتیاب ہو رہے ہیں اس وائرس سےاموات کی شرح صرف 3فیصد ہے ۔ اس لیے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔جنکو شک ہو وہ ضرور ٹیسٹ کے لیے جائیں۔ بیماری سے بھاگنامسئلے کا حل نہیں ہے۔بھاگ کر مصیبت میں گرفتار ہونے سے بہتر ہےکہ بندہ ہسپتال جائے،تھریڈ لکھنے کا مقصد یہی تھا کہ اگر آپ کو کھانسی ہےتو اسکو کھانسی ہی سمجھئے۔

Comments